in

فوڈ سیفٹی کیوں ضروری ہے؟ (Why Food Safety is Important)

کھانے کی حفاظت ایک ایسا عمل ہے جس کو سمجھنا اور اس پر عمل کرنا ہر کسی کی ذمہ داری ہے ۔ چاہے وہ گھر میں ہو یا کام کی جگہ پر کھانے کی حفاظت ضروری ہے۔ تاہم اس بات کو واضح کرنا مشکل ہے کہ کھانے سے پیدا ہونے والی بیماریوں سے کیسے بچا جاسکتا ہے ، اور اس کے بارے میں سوچنے کے لئے بہت سی مختلف چیزوں پر غور کرنا ضروری ہے۔ یہی وجہ ہے کہ سائنسدانوں نے کھانے سے پیدا ہونے والی بیماریوں کو سمجھنے اور واضح کرنے کے لئے کھانے کی حفاظت کے چار اصول متعارف کرائے ہیں۔

صفائی (Cleaning)

صفائی کرتے ہوئے کچھ احتیاطی تدابیر کو مدنظر رکھنا چاہیں مثلاً فرش کو صاف کرنے کے لیے کپڑا اور بالٹی علحیدہ ہونی چاہیے۔ اسی طرح روزانہ کیچن کو صاف کرنے کا شیڈول ہونا چاہیے اور فرش کو پہلے کیمیکل کے ساتھ صاف کیا جائے اور بعد میں اچھی طرح جراثیم دور کرنے چاہیں

کھانے کی چیز کو ہاتھ لگانے اور پکانے سے پہلے اپنے ہاتھوں کو گرم پانی اور صابن کے ساتھ اچھی طرح دھونا چاہیے۔ اور اس بات کو یقینی بناناچاہیے کہ کام کرنے والی ہر شے اچھی طرح سے صاف ہے اور خوراک بنانے سے کھانے تک کے عمل تک, صفائی کا خاص خیال رکھا گیا ہے۔

صفائی نصف ایمان ہے۔ کھانے میں موجود جراثیم کی تعداد کا بڑھنا کھانے پینے کی اشیاء کی ناقص صفائی کی وجہ سے ہوتا ہے اور یہی بیماریوں کے پھیلنے کی سب سے بڑی وجہ بنتی ہے۔ اسی وجہ سے یہ یاد رکھنا ضروری ہے کہ صاف جگہ ایک محفوظ باورچی خانہ ہے۔ جراثیم سب سے پہلے ہاتھوں کی وجہ سے پیھلتے ہیں۔ اگر آپ گوشت، فش اور دوسری کھانے کی چیزوں کو ہاتھ لگاتے ہیں تو اس کے فوراً بعد ہاتھ دھوئیں اور جو بھی برتن خوراک بنانے میں استعمال ہو ان کو بھی پہلے اور بعد میں اچھی طرح دھوئیں۔ تو خوراک کے بنائے جانے والی جگہ میں داخل ہونے سے پہلے شخصی صفائی کا بھی خیال رکھتے ہوئے ممکنہ آلودگی سے بچا سکے۔

food safty

ٹھنڈا کرنا (Chilling)

کھانے کی کچھ چیزوں کو ٹھنڈا کرنا اس لیے ضروری ہے کہ ٹھنڈا ماحول کچھ بیکٹیریا کے تولید اور پھیلنے کے عمل کو سست کرتا ہے یا پھر روک دیتا ہے۔ یہ خاص طور پر تازہ اشیا کے لئے ضروری ہے ، جو تیاری کے دوران بیکٹیریا کے ساتھ رابطے میں ہونے کا امکان رکھتے ہیں۔ انہیں ٹھنڈا رکھنے سے ہم کھانے کو کچھ عرصے تک محفوظ رکھ سکتے ہیں۔۔ عام طور پر ، جن اشیاء کو ریفریجریٹڈ کیا جانا چاہئے ان کو درجہ حرارت پانچ ڈگری سینٹی گریڈ تک رکھنے کی ضرورت ہے۔ کچن اور کھانے کی تیاری والی دوسری جگہوں میں کام کرنے والوں کو اپنے فریجوں کی مستقل نگرانی کرنے کی ضرورت ہوتی ہےتاکہ یہ یقینی بنایا جاسکے کہ وہ صحیح درجہ حرارت پر ہیں۔ یہ بات قابل غور ہے کہ زیادہ تر کھانے پینے کی اشیا فرج میں رکھنے سے ان کی کارآمد رہنے کی میعاد بڑھ جاتی ہے۔

کھانا پکانے (Cooking)

فوڈ سیفٹی میں یہ عمل ایک خاص مقام رکھتا ہے، جو اس بات کو یقینی بناتا ہے کہ تیار کردہ کھانا محفوظ ہے۔ کچے کھانے میں بیکٹیریا شامل ہوتے ہیں ، جن میں سے کچھ مضر صحت ہوتے ہیں۔۔ گوشت اور مچھلی جیسے کچے کھانے کو مناسب طریقے سے پکا کر خطرناک بیکٹیریا کو ہلاک کر دیا جاتا ہے، اور کھانے کو محفوظ کیا جاتا ہے ۔ اس اہم اصول کی پاسداری کرنے کے لیے یہ ضروری ہے کہ کھانا مناسب طریقے سے پکایا جائے۔ تاہم یاد رکھنے کا ایک اہم نکتہ یہ ہے کہ کھانے کو اچھی طرح پکانا بیکٹیریا کو مار دیتا ہے – یہ عام طور پر نقصان دہ کیمیکلز کو نہیں ختم کرتا جو بیکڑیا کے نتیجے میں پیدا ہو تے ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ ایک بار کھانا خراب ہونے پر محفوظ طریقے سے نہیں پکایا جاسکتا ہے۔ گھروں میں زیادہ تر لوگ ایک دفعہ کھانا پکا لیتے ہیں اور پھر ضرورت پڑنے پر اس کو گرم کر کے کھا لیتے ہیں۔ لیکن کھانا گرم کرتے وقت ایک بات کا خاص خیال رکھا جائے کہ اتنا کھانا گرم کرنا چاہیے جتنا کھانا ہو۔ بار بار کھانے کو گرم کرنے سے اس میں خطرناک کیمیکل پیدا ہو جاتے ہیں جو صحت کےلئے نہایت نقصان دہ ثابت ہو تے ہیں

food

کھانے میں باہر سے آلودگی آنا (Cross Contamination)

براہ راست گندگی کی منتقلی کو روکنے کے لیے ہمیں خام یا کچی خوراک کو تیار خوراک سے دور رکھنا چاہیں۔ خام خوراک کو اچھی طرح سے ڈھانپ لیں مثلاً کچے گوشت کو کسی پلاسٹک کی تھیلی میں پیک کر کے رکھیں۔ اسی طرح سبزیوں اور گوشت کو کاٹنے کے لیے علیحدہ علیحدہ چھریاں ہونی چاہیئے۔ جب چیزوں کو ذخیرہ کرنا ہے تو ان کو مناسب طریقے سے رکھا جائے۔ مثال کے طور پر ، سلاد کو کھانے سے پہلے پکانے کی ضرورت نہیں ہوسکتی، لیکن اگر یہ کسی آلودہ اور جراثیم والے کھانے کے ساتھ رابطے میں آ جاتا ہے تو پھر یہ نقصان دہ بیکٹیریا سے آلودہ ہوسکتا ہے۔ اس وجہ سے ، کام کے دوران تمام سطحوں اور برتنوں کو اچھی طرح صاف کرنے کی ضرورت ہے ، اور مختلف قسم کے کھانے کو الگ الگ ذخیرہ کرنا چاہیے تاکہ جراثیم ایک خوراک سے دوسری میں منتقل نہ ہو سکیں

اس کے بارے میں یہ بات کہنا کافی ہے کہ کراس کنٹیمینیشن تب ہوتی ہے جب کھانا کسی آلودہ چیز کے ساتھ رابطے میں آتا ہے۔ تو ہمیں اس بات کو یقینی بنانا چاہیے کہ فوڈ کی تیاری کے دوران جو بھی برتن استعمال ہو وہ جراثیم سے پاک ہو۔

food

نتیجہ (Conclusion)

ترقی یافتہ قومیں صحت مند معاشرے سے جنم لیتی ہیں اس لیے یہ ہمارا قومی فریضہ ہے کہ ہم اپنی اشیاء کو تیار کرتے وقت فوڈ سیفٹی کا خیال رکھیں.

 1,941 

4 Comments

Leave a Reply

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Intermittent Fasting: Popular Ways to Do

مائیکرو ارگنزم اور مختلف بیماریوں سے بچانے والی 5 صحت مند غذائیں Five Best Foods that fight against Microorganism